9.8 C
Pakistan
Monday, January 30, 2023

صدارتی ایوارڈ یافتہ عزیز میاں قوال کو مداحوں سے بچھڑے  برس گزر گئے

صدارتی ایوارڈ یافتہ عزیز میاں قوال کو مداحوں سے بچھڑے  برس گزر گئے،انکی قوالیاں آج بھی مداحوں کے دلوں پر راج کررہی ہیںعزیز میاں 1942 کو بھارت کے شہر دہلی میں پیدا ہوئے،ان کا اصل نام عبد ا لعزیز تھا، میاں ان کا تکیہ کلام تھا،جو وہ اکثر اپنی قوالیوں میں بھی استعمال کرتے تھے،جو بعد میں ان کے نام کا حصہ بن گیا،عزیز میاں نے پنجاب یونیورسٹی لاہور سے اردو اورعربی میں ایم اے کیا،انہوں نےاپنے فنی دور کا آغاز“عزیز میاں میرٹھی”کی حیثیت سے کیا،انہیں اپنے ابتدائی دور میں “فوجی قوال” کا لقب ملا کیونکہ ان کی شروع کی بیشتر قوالیاں فوجی بیرکوں میں فوجی جوانوں کے لیے تھیں
NAT
عزیز میاں کی مقبول ترین قوالیاں میں شرابی میں شرابی
تیری صورت اور اللہ ہی جانے کون بشر ہے شامل ہیں
NAT
عزیز میاں کا انتقال چھ دسمبر سن 2000 کو ایران کے شہر تہران میں یرقان کے باعث ہوا
اپنی گائی گئی زیادہ تر قوالیوں کی شاعری خود تخلیق کرنے والے عزیز میاں آج بھی اپنے
مداحوں کے دلوں میں زندہ ہیں

Related Articles

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Stay Connected

22,017FansLike
0FollowersFollow
20,500SubscribersSubscribe
- Advertisement -

Latest Articles